اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ خیبر سے کراچی تک عوام کو متحرک کر کے وزیراعظم نواز شریف کو قانون کے تابعداری پر مجبور کر دیں گے۔
بنی گالہ میں عمران خان کی سربراہی میں تحریک انصاف کا اجلاس منعقد ہوا جس میں جہانگیر ترین، نعیم الحق، شیریں مزاری، سیف اللہ نیازی، اسد قیصر، چوہدری سرور، نعیم بخاری سمیت مرکزی رہنماﺅں کے علاوہ پنجاب کے چاروں رینجرز کے صدور نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں پانامہ لیکس کے معاملے پر تحریک کیلئے حکمت عملی ، حکومت کے خلاف تحریک کے دوران 7 اگست کے پلان اور پشاور سے راولپنڈی تک مارچ کی تیاریوں سے متعلق بریفنگ دی گئی۔ اجلاس کے دوران پارٹی رہنماﺅں سے خطاب میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ پاکستان تاریخ کے اہم ترین دور اہے پر کھڑا ہے، کرپٹ اشرافیہ یا مستحکم جمہوریت میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنا ہو گا۔
عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں کرپٹ اور بدعنوان سیاسی ٹولہ جمہوریت کیلئے سب سے بڑا خطرہ ہے، ترکی میں سیاستدانوں سے بڑھ کر عوام نے جمہوریت کی حفاظت کی، قوم کو کرپٹ اشرافیہ یا مستحکم جمہوریت میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنا ہو گا، انہوں نے کہا کہ قوم کی امیدوں کا واحد مرکز تحریک انصاف ہے، 7اگست سے پاکستان میں ایک نئی تاریخ کا نکتہ آغاز ہو گا۔ ہم خیبر سے کراچی تک عوام کو متحرک کریں گے اور وزیراعظم کو قانون کے تابعداری پر مجبور کر دیں گے ۔
اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ میں تحریک انصاف کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات نعیم الحق نے بتایا کہ پارٹی کے اہم اجلاس میں ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال پر غور کیا گیا جب کہ پانامہ لیکس کے حوالے سے عوامی تحریک اور تمام آئینی و قانونی طریقہ کار اور حکمت عملی پر بھی مشاورت کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ سات اگست کو حکومت مخالف تحریک کا آغاز پشاور سے ریلی کی صورت میں سے کیا جا رہا ہے جس میں چیئرمین عمران خان اور پارٹی قیادت شرکت کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی انصاف کے حصول کیلئے ہر دروازہ کھٹکھٹائے گی ، الیکشن کمیشن میں وزیراعظم نواز شریف کے خلاف دائر ریفرنس کی بھی سماعت 5 اگست کو ہو رہی ہے جبکہ پارٹی قیادت نعیم بخاری کی تیار کردہ پٹیشن سپریم کورٹ میں دائر کرنے پر بھی غور کر رہی ہے ۔سیکرٹری اطلاعات تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ 6 اگست کو حکومت نے ٹی او آر کمیٹی کا اجلاس طلب کیا ہے جس میں شرکت کریں گے اور کمیٹی اجلاس میں حکومتی رویہ دیکھ کر آئندہ کا لائحہ عمل دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی اجلاس کے دوران انتخابات پر بھی مشاورت کی گئی اور کل تک سندھ اور خیبر پختونخوامیں نئے تنظیمی عہدوں کا فیصلہ کر لیا جائے گا۔

LEAVE A REPLY