اسلام آباد: مشیر خارجہ سرتاج عزیز کا کہنا ہے کہ پاکستان ترکی میں مضبوط اور پائیدار جمہوریت کا حامی ہے ۔

اسلام آباد میں سرتاج عزیز نے ترک وزیرخارجہ کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کی۔ دونوں رہنماؤں نےافغان مسئلہ کے پرامن اور پائیدار حل پر اتفاق کیا۔ مشیرخارجہ سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ ترک وزیر خارجہ سے دو طرفہ امور پر بات چیت ہوئی۔ ترک عوام کا بغاوت کی کوشش کوناکام بنانا جمہوریت کی فتح ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ترکی میں مضبوط ،پائیدار جمہوریت کی حمایت کرتا ہے اور ترک عوام اور حکومت کے ساتھ کھڑا ہے۔

سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ پاکستان اور ترکی نے افغان مسئلہ کے پرامن اورپائیدار حل پراتفاق کیا ہے۔قومی اسمبلی نے ترکی میں فوجی بغاوت کو ناکام بنانے کے حق میں قرارداد منظور کی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ترکی نے دنیا میں سب سے زیادہ مہاجرین کو پناہ دی۔ افغان امن سے متعلق دونوں ممالک کے خیالات یکساں ہیں۔ پاکستان اورترکی کی دوستی کو اسٹریٹجک تعلقات میں بدلنا چاہیے۔

ترک وزیر خارجہ نے افغانستان میں قیام امن کے لیے پاکستان کے کردار کو سراہتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں قیام امن کیلئے پاکستان اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان میں اعتماد سازی ضروری ہے،امید ہے افغانستان اور پاکستان چیلنجزکا حل ڈھونڈ لیں گے۔ ترکی، افغانستان میں قیام امن کے لیے چار ملک گروپ کی حمایت کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی ایک عالمی مسئلہ ہےجس سے مل کر نمٹنا ہوگا۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کا اہم کردار ہے۔ انہوں نے کہا کہ ترکی اور پاکستان دونوں دہشتگردی کا شکار ہوئے،دہشتگردی کیخلاف پاکستانی کوششیں قابل تعریف ہیں۔

میولود چاوش اوغلو کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان اورترکی کے تعلقات مضبوط اور برادرانہ ہیں۔ معاشی تعلقات بہتر نہ ہونے کی وجہ ٹرانسپورٹیشن کی کمی ہے، اس لیے اسلام آباد استنبول کوریڈور پر کام کیا جائے گا تاکہ نقل و حمل آسان ہوسکے۔

LEAVE A REPLY